Urdu News Agency 21

شیشہ کیفوں کلبوں کی وجہ سے نوجوان نسل تباہی کے طرف گمزان ہے۔ظہیر عباس

وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار کی خاموشی افسوس ناک ہے۔میڈیا سے گفتگو

لاہور(نمائندہ خصوصی)گلوبل ٹائمز میڈیا رپورٹ کے مطابق معروف کالم نگار و ایڈیٹر انچیف سجاول نیوز ظہیر عباس نے کہا کہ کمشنر گوجرانوالہ ذوالفقار گھمن ڈپٹی کمشنر گوجرانوالہ دانش افضال شیشہ کیفوں کیخلاف دفعہ 144 کیوں نہیں لگاتے جواب وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو دینا ہوگا

انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار صاحب پنجاب میں بڑھتے ہوئے شیشہ کیفوں کلبوں کی وجہ اور اثرات نوجوان نسل کے لئے موت کا سسب بن رہے ہیں اور اس کے زمہ دار آپ ہیں آپ کو اس کا جواب دینا ہو گا نوجوان نسل کو خراب اور برباد کر نے کے لئے اب شیشہ کیفے اور کلبوں کا کام سر عام شروع ہونے لگا تاکہ منشیات جیسا دھندہ عام شروع ہو جائے اگر آج شیشہ کیفوں پر مکمل طور پر پابندی نہ لگائی گئی تو اس ملک پاکستان میں ہر گلی محلے میں کینسر کے ہسپتال بنانے پڑے گے اور اس کینسر کو روکنے کے لئے پنجاب بھر کے تمام کمشنر ڈپٹی کمشنر کو مراسلہ جاری کیا جائے تمام شیشہ کلبوں پر دفعہ 144 نافذ کی جائے تاکہ نوجوان نسل لڑکے لڑکیاں اس بد تر نشے سے بچ سکے

معروف کالم نگار و ایڈیٹر انچیف سجاول نیوز ظہیر عباس نے بین الاقوامی گلوبل ٹائمز میڈیا کے ساتھ ایک اخباری بیان میں کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے مطالبہ ہے کہ اس پر فوری طور پر ایکشن لے شیشہ اسموکنگ ایک جان لیوا بیماری ہیں اور اس کا نقصان کیسے ہوتا ہے سگریٹ کے مقابلے میں شیشہ کا استعمال تقریباً 450 گناہ خطر ناک ہے ایک شیشہ 20 سگریٹ پینے کے برابر ہے شیشے کے ایک کش دھوئیں میں 5000 سے زائد کیمکل ہوتے ہے جن میں سے 100 سے زائد کیمکل سرطان کا باعث بنتے ہیں

شیشے میں کوئلہ استعمال کیا جاتا ہے جو کہ سرطان کا سسب بنتا ہے زیادہ دیر تک شیشہ پینے سے کینسر انسان کو موت کے قریب لے آتا ہیں شیشہ پینے والوں کے پھیپھڑے ختم ہو جاتے ہے جناب عالی اس ملک میں بڑھتے ہوئے کینسر سے بچاو اور ان شیشہ کیفوں کلبوں کو فی الفور بند کروائے اور دفعہ 144 نافذ کرے تاکہ نوجوان نسل کینسر جیسے مرض سے بچ سکے





Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں