قائداعظم کے پورٹریٹ کے سامنے غیر اخلاقی حرکات کے مقدمے میں نامزد 37

قائداعظم کے پورٹریٹ کے سامنے غیر اخلاقی حرکات کرنیوالا ملزم گرفتار

لاہور : قائداعظم کے پورٹریٹ کے سامنے غیر اخلاقی حرکات کے مقدمے میں نامزد ملزم لاہور سے گرفتار کرلیا گیا۔ رپورٹ کے مطابق قائداعظم کے پورٹریٹ کے سامنے لڑکی کے ہمراہ فوٹو شوٹ میں نظر آنے والے لڑکے کا نام ذوالفقار ہے اور وہ لاہور کا رہائشی ہے۔

پولیس ٹیم نے ملزم کو لاہور سے گرفتار کیا گیا جس کو اب اسلام آباد منتقل کیا جا رہا ہے۔ یادرہے کہ اسلام آباد ایکسپریس وے پر نصب قائداعظم کے پورٹریٹ کے سامنے غیر اخلاقی حرکات کا مقدمہ رواں ماہ کے اوائل میں درج کیا گیا تھا۔ تھانہ کورال پولیس نے شہری راشد ملک کی درخواست پر مقدمہ درج کیا۔

ایف آئی آر کے مطابق مقدمے کے مدعی نے بتایا کہ اسلام آباد میں تاریخی مقامات اور اشخاص کی تصاویر کے تقدس اور احترام ہر شہری پر فرض ہے۔ پولیس کے علم میں یہ معاملہ لانا چاہتا ہوں کہ کورال چوک پر نصب قائداعظم کے پورٹریٹ کے سامنے برہنہ لڑکے اور لڑکی کا ناچ اور تصاویر بنانا ہمارے عظیم قائد کی عزت کی پامالی ہے۔

پولیس نے مقدمہ تعزیراتِ پاکستان کی دفعہ 294 کے تحت درج کر رکھا ہے۔ اس دفعہ کے تحت عوامی مقامات پر غیر اخلاقی حرکات، نازیبا کلمات یا فحش گانے پر کسی بھی شخص کو جرم ثابت ہونے پر زیادہ سے زیادہ تین ماہ قید یا جرمانہ کیا جا سکتا ہے۔ قانون کے تحت عدالت دونوں سزائیں بھی دے سکتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں