۔12 سال کی لڑکی کو زیادتی کے بعد قتل کرنے ولا رشتہ دار، پڑوسی گرفتار 41

۔12 سال کی لڑکی کو زیادتی کے بعد قتل کرنے ولا رشتہ دار، پڑوسی گرفتار

پونچھ : آزاد کشمیر کے ضلع پونچھ کی تحصیل عباسپور کے گاؤں مہنگار میں قتل کی لرزہ خیز واردات، 12 سال کی لڑکی کو زیادتی کے بعد قتل کردیا اور نعش گٹر میں ڈال دی۔

15 اگست کی رات زاہد شاہ کی بیٹی حلیمہ معمول کی طرح کھانا کھا کر سونے چلی گئی، حلیمہ کلاس ہشتم (8th) کی طالبہ تھی، اس معصوم کو خبر نا تھی کہ وہ درندوں کے اس دیس میں رہتی ہے جہاں انسانی شکل میں چھپے بھڑیے ہر وقت کسی نا کسی حوا کی بیٹی کو درندگی کا نشانہ بنانے کے لیے تاک میں رہتے ہیں۔

رات گئے انسانی بھیڑیوں کا ایک گروہ آیا جس نے لڑکی کو وہاں ڈے اغوا کرکے کسی نامعلوم مقام پر لے کر چلے گئے۔ ان بھیڑیوں کا سردار محسن نامی شخص تھا جو بی ایس سی کا طالب علم ہے۔ یاد رہے محسن مقتولہ کا قریبی رشتے دار ہونے کے ساتھ ساتھ پڑوسی بھی ہے۔

درندوں کا یہ گروہ واللہ اعلم اس معصوم کلی کے ساتھ کتنی دیر اور کیسے کیسے درندگی کرتا رہا، یہ تاحال کنفرم نہیں ہوا کہ آیا حوا کی اس بیٹی کو اسی رات قتل کیا گیا یا اس کے بعد بھی کچھ دن تک زیادتی کرتے رہے۔ 15 اگست سے 22 اگست تک لڑکی کی لاش گٹر میں رہی ایس ایچ او تھانہ عباسپور کے مطابق مقتولہ کے والد زائد شاہ نے 16 اگست کو تھانہ میں رپورٹ درج کرائی کہ اسکی بارہ سالہ بیٹی حلیمہ جو رات کو اپنے کمرہ میں سوئی تھی صبح کمرہ میں نہ پائی گئی مقتولہ کے والد کی درخواست پر پولیس نے مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کی۔

معقول شبہ کی بنا پر مقتولہ کے قریبی رشتہ دار نوجوان محسںن شاہ کو گرفتار کر لیا گیا جس نے دوارن تفتیش انکشاف کیا کہ اس نے لڑکی کو گلہ دبا کر قتل کرکے نعش گٹر میں پھینکی ہوئی ہے جس پر پولیس تھانہ عباسپور نے ملزم کی نشاندہی پر گٹر سے مقتولہ کی نعش برآمد کرنے کے بعد پوسٹ مارٹم کر کے نعش کی تدفین کر دی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں