France cracks down on Muslims mirpur news 21

فرانس مسلمانوں کے خلاف کریک ڈاؤن ، مسجدکی بند ش کا حکم

پیرس (ویب ڈیسک) فرانس میں طلباکوگستاخانہ خاکے دکھانے والے ٹیچرکے قتل کے بعدکیے جانے والے کریک ڈاؤن میں ایک مسجدکو6ماہ کے لئے جبراً بندکروایاگیاہے،مسجدکے دروازے پر چسپاں کیے جانے والے سرکاری حکم نامے میں الزام عائدکیاگیاہے کہ مسجدانتظامیہ نے فیس بک پیج پرایک ایسی ویڈیوتقریرشئیرکی گئی تھی جس میں اسکول ٹیچرکے قتل پر اکسایاگیاتھا۔ عالمی خبررساں ادارے کے مطابق فرانس میں پیغمبراسلام  ؐ کے گستاخانہ کاکوں پرٹیچرکے قتل کے بعدشدت پسندوں کی تلاش میں کریک ڈاؤن آپریشن کیاجارہاہے جس کے تحت پیرس کے نواحی علاقے کی گرینڈ مسجدکوعارضی طورپر6 ماہ کے لیے بندکیاگیاہے ۔

مسجدکے دروازے پر چسپاں کیے جانے والے سرکاری حکم نامے میں الزام عائدکیاگیاہے کہ مسجدانتظامیہ نے فیس بک پیج پرایک ایسی ویڈیوتقریرشئیرکی تھی جس میں اسکول ٹیچرکے قتل پر اکسیایاگیاتھا۔ کریک ڈاؤن کے دوران پولیس نے ایک ایسے شخص کو بھی حراست میں لے لیاجس نے ٹیچرکوقتل کرنے والے نوجوان سے واٹس ایپ پر رابطہ کیاتھا اورمقتول ٹیچرکی اسکول برخانگی کے لیے آن لائن مہم بھی چلائی تھی۔واضح رہے کہ فرانس میں 18 سالہ نوجوان نے اسکول ٹیچرکولیکچرکے دوران پیغمبراسلام کے گستاخانہ خاکے دکھانے پر چھری کے وارکرکے قتل کردیاتھا جس کے بعدپولیس نے نوجوان کو تعاقب کے بعدگولی مارکرشہیدکردیاتھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں